میرے ان کہے لفظوں کو یوں بیان نہ کر
اپنے سچائ کے جذبوں کو یوں عنوان نہ کر

میں بھی ُاس خواب کی تعبیر کی تلاش میں ہوں
تو مگر اپنی حسیں آنکھوں کو حیران نہ کر

خدا نے تجھ کو بنایا نہیں ھے میرے لےء
تو زلف میرے لےء اپنی پریشان نہ کر

میں تجھے بھول نہ پاؤں گا زندگی میں کبھی
مجھے یوں یاد تو رکھنے کا ارمان نہ کر

مِرا تو شاید مقدر ہے ادھورا رہنا
تو مگر اپنی عبادت کو پشیمان نہ کر

تو نے چاہا ہے مجھے اور سبھی سے زیادہ
اب اور مجھ سے محبت تو مِری جان نہ کر

کھو نہ جانا ” سے “

– fromKho na JanaCopyrights Reserved

Advertisements