( Written at the time when two countries came very close to 5th war . Dedicated to Pakistani men with and without uniform who always respond to the call .They say ” A man who does not love his land can not love a woman ):)

ھمنوا آج نہیں
آج مجھے جانا ہے
میں نے مانا ہے تیری جان سے پیاری ہستی
تیری آنکھوں میں اسی پیار کا اقرار بھی ہے
تیرے بالوں میں حسیں رات کا سنُاٹا یے
تیرے گالوں پہ نئی صبح کا اظہار بھی ہے

پر میرا اور بھی وعدہ ہے کسی سے ھمدم
میری مٹُی جو مجھے سب سے حسیں پیاری یے
میرے اسلاف نے ہے اس کو لہو سے سینچا
میرے پرجوش جوانوں نے بھی جاں ہاری ہے

پھر اٹھا ہے وہی دشمن مع سامانِ حرب
مری زمین نے بیٹوں کو پھر پکارا ہے
اپنی مٹُی سے ہی گر جو وفادار نہیں
تجھ سے میری یہ چاہت بھی پھر ادھوری ہے
یہ بھی ممکن ہے کھو جاؤں کہیں رستے میں
اپنے اس پیار کی تکمیل پر ضروری ہے

میں نے اب تک تو صرف تیرا کہا مانا ہے
مگر
میری جاں آج نہیں!
آج مجھے جانا ہے

کھو نہ جانا ” سے “

– fromKho na JanaCopyrights Reserved

Advertisements