آج ھم نے سوچا ہے
تم کو بھلانے کی
پھر ایک کوشش کریں گے ھم

تمھاری ہر ادا جاناں جو ھم کو لبھاتی تھی
تمھاری کھنکناتی ہر ہنسی پاگل بناتی تھی
ھمارے روز و شب کو یونہی رنگیں بناتی تھی
اس بےرنگ دنیا سے
ان کو مٹانے کی
پھر ایک کوشش کریں گے ھم

صبح کے چار بجتے ہی تمھارا فون آ جانا
خدا سے میرا تم کو مانگنا یوں ہاتھ پھیلا کر
اپنی سب دعاؤں میں تمھاری ہر خوشی چاہنا
تمھارے سارے اشک مسکراہٹ میں بدل دینا
تمھارے ان لبوں پر
ایک مسکاں سجانے کی
پھر ایک کوشش کریں گے ھم

وہ اپنے سارے دن کے کئی قصّے سنا دینا
وہ بچپن اور جوانی ، دوستی ناطے زمانے کے
وہ ماں اور بابا کی کہانی لمحوں میں کہہ جانا
وہ اپنی خاص نظموں میں میری تصویر بھر دینا
اپنی الجھی سوچوں سے
سب جملے مٹانے کی
پھر ایک کوشش کریں گے ھم

میری ہر بات کو درمیاں سے کاٹ کر کہنا
کہ دیکھو اس طرح ہوتا نہیں ہے اپنی دنیا میں
تمھاری راہ میں تکتی جو ہوتی میں جہاں تم ہو
ابھی تک ہم کھڑے ہو کر تمھاری راہ تکتے ہیں
یہ یاد تم کو دلانے کی
پھر ایک کوشش کریں گے ھم

کھو نہ جانا ” سے

Tranlsation

Today I have decided
I will try once more
to forget you

Your every act that enticed my heart
your laughter that made me crazy
things that brought colors to my days and nights
to erase those colors

from my colorless world
I will try once more

Your calling me at 4 in the morning
my wishing only for you from God
asking for your happiness in my every prayer
replacing your tears with smiles
to put one more smile
on your lips
I will try once more

You telling me all stories from your day
from your childhood, youth, friendships and relations
telling me all about your parents within moments
sketching my picture in your special poems
to erase all those sayings
from my entangled thoughts
I will try once more

Your interrupting my talks and telling
“in our cultural norms things don’t move fast
I ‘d have waited for you had I been at your place”
I am still waiting for you
to remind you
I will try once more

fromKho na JanaCopyrights Reserved

Advertisements