جب مینہ بھی زور سے برسا تھا
جب گہرے بادل چھائے تھے
جب پیاسی گنگا بہتی تھی
جب دور بھی اپنے سائے تھے
پھر پیار بھری برسات لئے
اک شام ڈھلے تم آئے تھے

میری چوڑی کنگنا کھنک گئے
میری پائل بھی چھنکار اٹھی
میرے ہاتھ کی مہندی لال ہوئی
میری بندیا بھی ماہتاب بنی
میرا کجراِ شب کی مثل ہوا
گیسو میں رات دراز ہوئی
انہی سپنوں کی سوغات لئے
اک شام ڈھلے تم آئے تھے

پھر تم نے کیا اظہارِ وفا
اور دل کی بات بھی کہہ ڈالی
میرے دل نے کیا اقرارِ وفا
کٹھور بنی میں چپ ہی رہی
ترسے رہے تم میری ہنسی
الفاظ لبوں سے کہہ نہ سکی
تم لوٹ گئے تکتے تکتے
ان آنکھوں میں آنسو لے کر
ہم تم کو روک نہ پائے تھے
جس شام ڈھلے تم آئے تھے

اب راہ تمھاری دیکھتی ہوں
اس آس پہ جیتی مرتی ہوں
میری چوڑی، پائل، کنگنا بھی
میری مہندی، کجرا، بندیا بھی
میرے سپنے بھی، میری نندیا بھی
بیٹھے ہیں اسی ہی آس پہ سب
بس خوشیوں کی بارات لئے
اک شام ڈھلے تم آو گے
میرے سپنوں کی سوغات لئے
کہہ دو نہ کہ تم آو گے
وہی میرے لئے جذبات لئے
لکھ دو نہ
کہ تم آو گے
اک شام ڈھلے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کھو نہ جانا“ سے “

Translation

When it rained heavily
when dark clouds overcast
when thirsty Ganges flowed
when my own shadows seemed distant
with monsoon of love
you showed up one evening

My bangle, bracelet chattered
my anklet too sounded the bells
henna of my hands turned red
my bindya turned into moon
my kohl turned dark
my tresses spread like night
with gift of all these dreams
you came one evening

Then you expressed your love
and opened your heart to me
though my heart agreed to the love
but frigidly I kept quiet
you longed for my smiles
but I could not express the words
you looked at me and returned
with tears in eyes
I could not stop you
the evening you came

Now I look to your paths
I live and die with a hope
my bangle, anklet, bracelet too
my henna, kohl, bindya too
my dreams too, my sleep too
waiting with a hope that
with bundles of happiness
you will come one evening
with gifts of my dreams
please tell me you will come
with the same sentiments again
please write to me you will come
one evening……….

from ” Kho na JanaCopyrights Reserved

Advertisements