تم گدھ کے پجاری ہو
شیدائی ہو
محسنوں کے تم قاتل ہو
ہرجائی ہو
اپنے بھائیوں کا تم تو لہو بیچ کر
ماؤں بہنوں کی بچوں کی قیمت لگا
سرخرو ہو گئے
تم نے آقا کو سجدے کئے اس قدر
بھری دنیا میں بےآبرو ہو گئے
خون دے کے مٹی نے سینچا تمھیں
سمجھ کر کہ شمشیر کی نوک ہو
اس کو معلوم کیا
تم صرف جونک ہو
ریت کی دیوار ہو
نیم کردار ہو
شہیدوں کی لاشوں پہ رکھ کے قدم
ناموس کے بیوپاری بنے
ابلیس کے تم حواری بنے
پر مردار کے تاجر سنو
یاں بھوک ہے افلاس ہے پر ہار نہیں ہے
یہ دیس میرا دیس ہے بازار نہیں ہے

Translation

You are follower of vulture
its admirer
You are murderer of your benefactors
and disloyal
By selling the blood of your brothers
and putting a price on your mothers, sisters and children
you achieved success
You bowed down to your owner so many times
that you lost all dignity
This land strengthened you with its own blood
thinking that you will be its armor
but it does not know
you are just leeches
wall of sand
a mere weak character
Stepping on martyrs bodies
you traded the honor
you befriended the devils
listen o traders of carrion
There is hunger, poverty but not defeat
This is my country , not a bazaar!

Copyrights Reserved.

Advertisements