تو نے مڑ کر جو صدا دی تو مجھے یاد آیا
گمنام سے رستوں پہ تیرا اک وعدہ
ایسا وعدہ کہ عہد سب نبھانے کا
وہ اک قسم کہ دوجے کو
نہ بھلانے کی
تم نے یہ عہد کیا تھا ہم سے
تھکن سے چور یا کہیں حادثے میں گم ہو کر
بچھڑ جو جائیں تو دیکھو گے نہ کہیں مڑ کر
کہ زندگی نام ہے بڑھتے ہی چلے جانے کا
پیچھے رہ جائیں ، انہیں ھمسفر نہیں کہتے
تیری آواز سنی تو مجھے احساس ہوا
اپنی ساری حسیں قسموں کی طرح
آخری وعدہ بھی تو نے توڑ دیا

کھو نہ جانا“ سے “

Translation

Your turning around and calling me
has brought back the memories of your promise
A promise of keeping all the vows
A swear not to forget each other ever
You promised me that
“Separated by hardships or lost by accident
we will not look back
As life has to move forward
and one left behind can not be called a companion”
As I heard your voice, I have realized
Like all of your beautiful vows
you have broken your last promise

from “ Kho na Jana” Copyrights Reserved

Advertisements