بہت آزاد پنچھی ہے
کسی بھی پل اُڑ آتی ہے
غموں کو یہ سموتی ہے
خوشی میں چین لاتی ہے
کبھی کانٹوں کے جیون میں
کبھی ذلفوں کی چھاؤں میں
کبھی پتھر کے شہروں میں
کبھی پیپل کے گاؤں میں
سکوں پر صرف ملتا ہے
اسے ممتا کے پاؤں میں

یہ دنیا خوبصورت ہے“ سے “

Translation

As a free bird
it comes to you any instant
absorbs the sadness
brings peace in happy moments
It comes
in life full of hurdles
in the shadows of tresses
in the city of stones
in the village of peepal
but only finds peace
at the feet of a mother

From ” Yeh Dunya Khubsoorat Hai “

Advertisements